عمران خاں کا دورہ مکمل ہوتے ہی امریکی صدر کا ایک اور بڑا سرپرائز

28

اسلام آباد (نیوز ڈیسک آن لائن) وزیر اعظم پاکستان عمران خاں جو عسکری قیادت کے ہمراہ تین روزہ دورے پر امریکہ میں موجود ہیں جنہوں نے پہلے روز پاکستانی کمیونٹی کی بہت بڑی تعداد سے خطاب کر کے امریکیوں کو ورطہ حیرت میں ڈال دیا تھا جبکہ اُن کی امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے ہونے والی ملاقات بھی بہت اہمیت کی حال تھی ۔

اس ملاقات پر بات کرتے ہوئے معروف صحافی صابر شاکرنے کہا ہے کہ وزیر اعظم پاکستان عمران خاں نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے ہونے والی ملاقات کے دوران صدر ٹرمپ کو سی پیک میں شمولیت کی دعوت دی ہے ملاقات میں یہ بھی باور کرایا گیا کہ ماضی میں پاک امریکہ تعلقات کو ٹشو پیپر کی طرح استعمال کیا گیا ۔ ماضی میں پاک امریکہ تعلقات ایک تیسرے ملک کی وجہ سے خراب ہوئےملاقات کا مقصد امریکہ میں اس بات کا احساس پیدا کرنا تھا کہ پاک امریکہ تعلقات دو طرفہ اور برابری کی بنیاد پر ہونے چاہئیں۔ کسی تیسے ملک کی وجہ سے ان تعلقات میں تعطل نہیں آنا چاہئے اگر پاکستان چین کے ساتھ کوئی پراجیکٹ پایہ تکمیل تک پہنچا رہا ہے تو امریکہ کو اس پر اعتراض نہیں ہونا چاہئے اور نہ ہی بھارت یا کسی اور ملک کی وجہ سے پاکستان کو نظر انداز کرنا چاہئے۔ پاکستان اور امریکہ کے مابین شارٹ ٹرم تعلقات نہیں ہونے چاہئیں بلکہ یہ تعلقات دیرپا اور مضبوط بنیادوں پر ہونے چائیں تاکہ خطے میں امن اور سلامتی کو فروغ حاصل ہو سکے اور ایک دوسرے پر اعتماد میں اضافہ ہو سکے۔ امریکی صدر نے دورہ پاکستان کی دعوت بھی قبول کر لی ہے جو کہ خوش آئند ہے۔

Facebook Comments