سپریم کورٹ کے سابق چیف جسٹس پاکستان کو لے ڈوبے ایک غلط فیصلے نے پاکستان کو 4.7ارب ڈالر کا نقصان کروا دیا

96

اسلام آباد (نیوز ڈیسک آن لائن) سپریم کورٹ آف پاکستان کے سابق چیف جسٹس افتخار محمد چودھری پاکستان کو لے ڈوبے افتخار محمد چودھری کے ایک فیصلے نے پاکسستان کو جرمانہ کروا دیاپاکستان کو عالمی ادارہ برائے سسرمایہ کاری سیٹلمنٹ نے 7۔4ارب ڈالر کا جرمانہ کر دیا جس سے پاکستان کو بہت بڑا دھچکا لگا ہے ۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ آف پاکستان کے سابق چیف جسٹس افتخار محمد چودھری پاکستانی معیشت کو لے ڈوبے ہیں جن کے کئے گئے ایک فیصلے نے ملکی معیشت کا بیڑہ غرق کر دیا ہے ۔میڈیا رپورٹس کے مطابق بارک اینڈ انٹوفاگاسٹانے اس وقت کی پاکستان پیپل پارٹی کی حکومت کے جانب سے بلوچستان میں کئے گئے معاہدے کی خلاف ورزی پر عالمی ادارہ برائے سرمایہ کاری سیٹلمنٹ میں کیس دائر کیا تھا یہ دونوں کمپنیاں اس وجہ سے اپنا کیسعالمی ادارہ برائے سرمایہ کاری سیٹلمنٹ میں لے کر گئی تھیں کیونکہ ان کمپنیوں کا موقف تھا کہ حکومت پاکستان نے ان کے ساتھ کئے گئے معاہدوں کی خلاف ورزی کی ہے اس معاملے کی سنگینی سے متعلق کئی بار افتخار محمد چودھری کو آگاہ کیا گیا مگر اُنہوں نے سُنی ان سُنی کردی اور غفلت لاپرواہی اور غیر ذمہ داری ثبوت دیا۔ میڈیا رپورٹس میں مزید انکشاف کیا گیا ہے کہ پاکستان کو چار ارب ڈالر جرمانہ کیا گیا ہے جبکہ 70 کروڑ ڈالر سود کی مد میں ادا کرنا ہوں گے ملک جو پہلے ہی قرضوں تلے دبا ہوا ہے اور ملکی معیشت تباہی کے دہانے پر ہے ایسے میں یہ خبر بہت پریشان کن ہے۔

Facebook Comments