انگلینڈ سے ورلڈ کپ واپس لے لیا جائے گا؟ 24 گھنٹے بعد ہی انگلینڈ کی کرکٹ ٹیم کے لئے انتہائی بُری خبر

31

اسلام آباد (نیوزز ڈیسک آن لاائن) اتوار کے روز انگلینڈ اور نیوزی لینڈ کے مابین ورلڈ کپ 2019 کا فائنل کھیلا گیا جو کہ ورلڈ کپ کی تاریخ کا سنسنی خیز میچ تھا اس میچ کے آخری اور میں انگلینڈ کی ٹیم کو اوور تھرو کے 6 رنز ملے تھے گیند باؤنڈری لائن کراس کر گئی حالانکہ انگلش کھلاڑی بین سٹوکس اپنا دوسرا رنز مکمل نہیں کر پائے تھے۔

سری لنکن ایمپائر درھما سینا نے انگلش ٹیم کو اوور تھرو کے 6 رنز دئیے جو کہ انگلینڈ کی فتح کا سبب بن گئے اب آئی سی سی کے بہترین ایمپائر سائمن ٹفل نے انگلینڈ کی فتح پر سوال اُٹھا دیا ہے ورلڈ کپ کے فائنل میں انگلینڈ کو غلط طور پر ایک اضافی رن دیا گیا ۔میڈیا رپورٹس کے مطابق انٹرنیشنل ایمپائر سائمن ٹفل کا کہنا ہے کہ انگلینڈ کو ایک رن غلط طور پر دیا گیا ہے اس طرح انگلینڈ کا ورلڈ چیمپئن بننا غیر قانونی ہے کیونکہ جب نیوزی لینڈ کے کھلاڑی مارٹن گپٹل نے تھرو کیا تو اُس وقت سٹوکس نے اپنا دوسرا رن مکمل نہیں کیا تھا اسی وجہ سے سٹوکس کو اسٹرائیک ملی اتنے بڑے اور اہم ترین میچ میں ایک ٹیم کو اضافی رن دینا مخالف ٹیم کی شکست کا باعث بن گیا سائمن ٹفل نے ایم سی سی کے قوانین کی کتاب کے قانون8۔19 کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ ایک واضح غلطی ہے اور آئی سی سی کو ورلڈ کپ کے فائنل کے نتیجے کی تبدیلی پر غور کرنا چاہئے سائمن ٹفل کے ااس اعتراض کے بعد کرکٹ ماہرین نے بھی یہاں تک کہہ دیا ہے کہ اصل ورلڈ چیمپئن نیوزی لینڈ ہی ہے انگلینڈ کی فتح ناجائز ہے آئی سی سی کو اس پر سنجیدگی سے غور کرنا چاہئے۔

Facebook Comments